Essay on City life In Urdu

شہری زندگی پر ایک مضمون

ہندوستان اور پاکستان کو دیہات کا ملک کہا جاتا ہے لیکن پچھلی صدی کے دوران ان ملکوں میں بہت سے شہر ترقی کر چکے ہیں۔ بہت سے شہر میٹرو شہر بن چکے ہیں۔ یہ شہر بہت تیز رفتاری سے آگے بڑھ رہے ہیں۔ طرز زندگی بہت تیزی سے بدل رہی ہے۔ بڑے شہر میں زندگی مصروف سرگرمیوں سے بھری ہوئی ہے۔ یہاں کسی کے پاس کسی اور کے لئے وقت نہیں ہے۔ لوگوں کو اتنے کاموں کو کرنے کے لیے حصہ لینا پڑتا ہے اور دور دراز مقامات پر جانا پڑتا ہے کہ ان کے پاس اپنے لئے بھی وقت نہیں ہوتا ہے۔ شہری زندگی زیادہ تر لوگوں کو اپنی طرف راغب کرتی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ جب کوئی شہر میں رہتا ہے تو وہ آسانی سے معاشرتی سہولیات ، تفریحی سہولیات اور عظیم انفراسٹرکچر تک رسائی حاصل کرسکتا ہے۔

شہری آدمی کو کسی کے پاس کھڑے ہونے اور گھورنے کے لئے ذرا بھی وقت نہیں ہوتا۔ ان کی نہ آنکھیں ہیں نہ ہی کان جو فطرت کا خوبصورتی سے لطف اٹھا سکیں۔ وہ ہمیشہ اپنے پیروں پر ہی رہتے ہیں۔

بڑے شہروں میں زندگی کا اپنا ایک دلکش نظارہ ہوتا ہے جیسے سینما گھر ، ملٹی پلیکس اور نائٹ کلب تفریح ​​کا ذریعہ ہوتے ہیں۔ لوگوں کی تفریح ​​کے لئے بہت سے ثقافتی شوز کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ چائے کی دکانیں ، کافی ہاؤسز ، ہوٹلوں ، مولز اور ریستوراں شہر کے لوگوں کی توجہ کا مرکز ہوتے ہیں۔ تعلیمی سہولیات شہروں میں بہترین ہوتی ہے۔ لڑکے اور لڑکیاں بغیر کسی دشواری کے اعلی تعلیم حاصل کر سکتے ہیں۔ انہیں بہت اچھے کالجوں ، یونیورسٹیوں اور دیگر تعلیمی اداروں تک آسان رسائی حاصل ہوتی ہے۔ بڑی بڑی لائبریریاں اور لیبارٹریاں شہر کے لوگوں کے اختیار میں ہوتی ہیں۔ انتہائی اعلی معیار کی طبی امداد صرف شہروں میں ہی دستیاب ہوتی ہے۔ نرسنگ ہومز میں بہت اچھے اسپتال اور آلات موجود ہوتے ہیں۔

انتہائی اعلی معیار کی طبی امداد صرف شہروں میں ہی دستیاب ہوتی ہے۔ یہاں بہت اچھے ہسپتال اور سامان موجود ہوتے ہیں۔ نرسنگ ہوم میں گھر جیسا ماحول ہوتا ہے لیکن دیہاتوں میں طبی سہولیات بہت خراب ہوتی ہیں۔ شہری زندگی کو کوئی نقصان نہیں پہنچتا ہے۔ شہروں میں حادثات ایک عام خصوصیت بن چکے ہیں۔ اسکوٹر ، رکشہ اور موٹر کار بہت سارے حادثات کا سبب بنتے ہیں۔ لوگوں کو تنگ اور گندی جگہوں پر رہنا پڑتا ہے۔ مکانات چھوٹے اور دم گھٹنے والے ہوتے ہیں۔ لوگوں کو چھوٹے چھوٹے فلیٹوں میں رہنا پڑتا ہے اور انہیں یہاں زیادہ کرایہ ادا کرنا پڑتا ہے۔

شہری زندگی کے فوائد

  • (1) شہر کی زندگی کا پہلا فائدہ بجلی تک رسائی ہے۔ بہت سے دیہی علاقوں کے برعکس جن میں بجلی نہیں ہے شہر میں زیادہ تر مکانات میں بجلی ہے جو بہت سے لوگوں کے لئے سہولت کی حامل ہے۔
  • (2) جب آپ شہر میں رہتے ہیں تو آپ کو بہتر سڑکوں اور آمدورفت کے بہتر ذرائع حاصل ہوتے ہے۔ شہروں تک بہتر روڈ نیٹ ورکس ، ہوائی اڈوں اور ٹرینوں تک رسائی ہے جو نقل و حمل کو آسان کرتی ہیں۔
  • (3) یہاں روزگار کے مزید مواقع بھی موجود ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ بہت ساری صنعتیں اور تجارتی مراکز شہروں میں پائے جاتے ہیں۔
  • (4) شہر میں بہتر تعلیمی سہولیات موجود ہوتی ہیں۔ اس سے ان علاقوں کے لوگوں کے لئے خواندگی کی اعلی سطح کی طرف جاتا ہے۔
  • (5) شہری زندگی ثقافتی اتحاد کو بھی فروغ دیتی ہے۔ اس حقیقت کی وجہ یہ ہے کہ شہروں میں لوگ مختلف علاقوں سے آتے ہیں اور کام اور رہائشی علاقوں میں بات چیت کرتے ہیں۔
  • (6) شہر میں صحت کی سہولیات تک رسائی آسان ہے۔ آپ شہر میں بہتر طبی امداد حاصل کرسکتے ہیں کیونکہ بیشتر بڑے اسپتال اور ڈاکٹر وہاں موجود ہوتے ہیں۔
  • (7) شہر میں لوگوں کو تفریح بھی فراہم ہوتی ہے۔ شہر میں تفریحی مراکز بہت سے ہوتے ہیں اور مختلف پرکشش مقامات جیسے گیم پارکس اور میوزیم۔
  • (8) شہر کی زندگی کا ایک اور فائدہ خریداری مراکز بھی ہے۔ بنیادی لوازمات خریدنا کسی کے لئے بھی بہت آسان ہے کیونکہ خریداری کے مراکز بہت سارے اور قابل تعریف ہوتے ہیں۔
  • (9) شہر میں رہنا بھی فائدہ مند ہے کیونکہ آپ کو تکنیکی ترقی حاصل ہوتی ہے۔ ایک بار جب نئی ٹکنالوجی تیار ہوجاتی ہے تو شہری علاقوں میں رہنے والے اکثر اس کو آسانی سے حاصل کر لیتے ہیں۔

شہری زندگی کے نقصانات

  • (1) شہر کی زندگی کا ایک نقصان شہر میں بے روزگاری کی سطح کی وجہ سے ہے جو لوگ معاش کمانے کے لئے جرم کرتے ہیں۔
  • (2) شہری زندگی دیہی زندگی سے زیادہ مہنگی ہے۔ دیہی علاقوں کے مقابلے میں شہر میں خوراک ، پانی ، رہائش اور بجلی کی لاگت بہت زیادہ مہنگی ہوتی ہے۔
  • (3) شہر کی زندگی کا ایک اور نقصان ٹریفک کی بھیڑ ہے۔ شہر میں کاروں کی تعداد بہت زیادہ ہونے کی وجہ سے خاص طور پر ڈیوٹی کے اوقات میں جب لوگوں کو کام کے لیے جانا پڑتا ہے تو ٹریفک ایک مسئلہ بنتا ہے۔
  • (4) سیوریج کے نظام بھی شہر کی زندگی کا ایک اور برا پہلو ہیں۔ آبادی کی اعلی سطح کی وجہ سے بہت سارے لوگ ایک ہی سیوریج سسٹم کا استعمال کرتے ہیں جو اچھی طرح سے برقرار نہ رکھنے کی صورت میں رکاوٹ کا باعث بنتے ہیں۔
  • (5) شہر میں آبادی زیادہ زیادہ ہوتی ہے اس سے سڑکوں پر چلنا مشکل ہوجاتا ہے کیونکہ آپ کو ممکنہ طور پر دوسرے لوگوں سے ٹکرانا پڑتا ہے جس میں تکلیف ہوسکتی ہے۔
  • (6) جب کوئی شہر میں رہتا ہے تو وہ آواز کی آلودگی کا بھی خطرہ بن جاتا ہے۔ اس کی وجہ بہت سے تفریحی مراکز اور کاروں کی زیادہ تعداد ہے۔
  • (7) شہر میں رہتے ہوئے اپنی ثقافت کو کھو دینا بھی بہت آسان ہے۔ یہ مختلف ثقافتوں کے سامنے آنے کی وجہ سے ہے۔
  • (8) شہر میں زندگی گزارنے کا ایک اور نقصان یہ بھی ہے کہ زمین مہنگی ہوتی ہے اور اسی وجہ سے زیادہ تر لوگ رہنے کے لئے کرایے میں قرض جمع کرتے ہیں جس سے ان کے مالی معاملات متاثر ہوتے ہیں۔

نتیجہ

اگر کسی کے پاس آمدنی کا مستحکم ذریعہ ہو تو شہری زندگی بہتر ہوسکتی ہے۔ تاہم بغیر نوکری کے شہر میں رہنا بہت مشکل ہوتا ہے جس کی وجہ سے لوگ پیسہ حاصل کرنے کے غیر قانونی طریقوں کا انتخاب کرتے ہیں۔ لہذا یہ مستحکم ملازمت یا کاروباری خیال کے ساتھ شہر منتقل ہونے کا مشورہ ہے جو آپ ترقی کرسکتے ہیں۔

Close