Advertisement
پیارے دوست،
خوش رہو!
تم کیسے ہو اور باقی سب گھر والے کیسے ہیں؟ کافی دنوں سے تمھارا کوئی خط نہیں ملا تو سوچا آج تمھیں میں ہی خط لکھ دوں۔ جیسا کہ تم جانتے ہو کہ ہمارے امتحان ہونے والے ہیں تو میں نے اپنی تمام تر توجہ فلحال پڑھائی پر مرکوز کر رکھی ہے۔ اتنی سخت پڑھائی کے دور ایک دن ہمارے اساتذہ نے پکنک منانے کا فیصلہ کیا تاکہ تمام طلبہ کے دماغ تھوڑے فریش ہوسکیں۔ ہم کچھ روز قبل ہی سی سائڈ گئے اور مجھے وہاں بہت مزہ آیا۔

ہم سب نے یہ طے کیا تھا کہ ہم گھر سے تھوڑا تھوڑا کھانا بنا کر لائیں گے تاکہ کسی پر بھی کوئی بوجھ نہ پڑے۔ میں اپنے گھر سے کٹھے آلو بنوا کر لے گیا تھا۔ ہم سب لوگ صبح صبح اسکول پہنچے پھر اساتذہ کی رہنمائی میں بس میں سوار ہو کر کچھ دیر میں سی سائڈ پہنچ گئے۔ وہاں پر ہم سب پانی میں گئے اور خوب مزہ کیا۔ دس بجے کے بعد خوب مزے کر کے ہم سب پانی سے باہر آئے اور پھر ہم نے کرکٹ اور فٹبال کھیلا۔ کچھ اور تفریح کرنے کے بعد ہم نے کھانا کھایا۔ کھانا کھا کر ہم نے گھوڑے اور اونٹوں کی سواری کی پھر سپورٹ کار میں بھی بیٹھے۔ اس کے بعد ہم سب بس میں سوار ہوئے اور اسکول کی طرف روانہ ہوگئے۔ ہمیں بس میں بھی بہت مزہ آیا۔ اسکول پہنچتے پہنچتے ہمیں تین بج گئے تھے۔ اسکول آکر ہم سب نے اپنا اپنا سامان لیا اور ایک بھرپور دن گزار کر اپنے اپنے گھر کی جانب روانہ ہوگئے۔ اب ہم سب دوست خوب دل لگا کر دوبارہ پڑھائی کی جانب متوجہ ہوگئے ہیں۔ امید ہے تم بھی پڑھائی کررہے ہوگے لیکن پڑھائی کے ساتھ ساتھ تفریح بھی ضروری ہے تاکہ دماغ فریش ہوسکے۔ اس خط کا جواب ضرور لکھنا، تمھارے خط کا مجھے انتظار رہے گا۔
فقط تمھارا دوست
ا – ب – ج
Advertisement

Advertisement

Advertisement

Advertisement
Advertisement