Advertisement

سہلِ ممتنع (Inimitably Easy) شعری اظہار کی اصطلاح ہے۔ ایک ایسا شعر جو اس قدر آسان لفظوں میں ادا ہوجائے کہ اس کے آگے مزید سلاست کی گنجائش نہ ہو ’’سہلِ ممتنع‘‘ کہلاتا ہے۔مثلاً مومن خاں مومنؔ کا شعر؀

تم میرے پاس ہوتے ہو گویا
جب کوئی دوسرا نہیں ہوتا

یا میرؔ کا یہ شعر؀

Advertisement
رات محفل میں تری ہم بھی کھڑے تھے چپکے
جیسے تصویر لگا دے کوئی دیوار کے ساتھ

سہلِ ممتنع کی خاصیت رکھنے والی شاعری تاثیر کی قوت اور تا دیر زندہ رہنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ سہلِ ممتنع شعری اظہار کا سادہ ترین پیرایہ ہے۔
(پروفیسر انور جمال کی تصنیف ادبی اصطلاحات مطبوعہ نیشنل بُک فاؤنڈیشن، اشاعتِ چہارم مارچ، 2017ء، صفحہ نمبر 120-21 سے انتخاب)

Advertisement

Advertisement
تحریرمحمد ذیشان اکرم
Advertisement