بوعلی سینا

  • قلت عقل کا اندازہ کثرت کلام سے ہوتا ہے۔
  • قرض ذلت ہے
  • زیادہ خوشحالی اور زیادہ بدحالی دونوں برائی کی طرف لے جاتے ہیں۔
  • مباحثہ عقل کے لئے صیقل اور جاہلوں کے لئے تخم عداوت ہے۔
  • خاموشی گفتگو کا حسن ہے۔
  • جب آئے دن تمہاری رائے بدلتی رہتی ہے تو پھر اپنی رائے پر بھروسہ کیوں کرتے ہو۔
  • بہترین قول ذکر ہے، بہترین فعل عبادت اور بہترین خصلت علم ہے۔
  • اتنا کھاؤ جتنا ہضم کر سکو۔
  • شیریں غذا بدن کو گرم کرتی ہے اور نمکین غذا بدن کو خشک کرتی ہے اور دبلا کرتی ہے۔
  • بیماریوں میں سب سے بڑی بیماری دل کی ہے اور دل کی بیماریوں میں سب سے بڑی دلآزاری ہے۔
  • بغیر بھوک کے غذا نہ کھائیں اور جب بھوک تیز ہوجائے تو بھوکے نہ رہیں۔
  • تلوار، توپ اور بندوق سے اس قدر خلقت نہیں مرتی جتنی کہ بسیارخوری سے مرتی ہے۔
  • ترش غذا جلد بوڑھا کرتی ہے بدن کو دبلا کرتی اور پٹھوں کے لیے مضر ہے۔
  • مزیدار غذا عمدہ اور اچھی ہے اوربھوک کو بڑھاتی ہے اور بدمزہ غذا کو دیر میں طبیعت قبول کرتی ہے اور بھوک کو گھٹاتی ہے۔
  • میری دو تمنائیں ہیں۔ اول یہ کہ خدا کا کلام سنتا رہوں دوم خدا کا کوئی بندہ دیکھتا رہوں۔



Close