Advertisement

اس کہانی کے سوالوں کے جوابات کے لیے یہاں کلک کریں۔

گرامر

  • فاعل: وہ کلمہ جو کسی کام کے کرنے والے کو ظاہر کرے۔ مثال کے طور پر لڑکی گانا گاتی ہے۔ یہاں لڑکی فاعل ہے۔
  • مفعول: وہ کلمہ جو اس شخصیت یا چیز کو ظاہر کرے جو کام کر رہا ہو۔ جیسے مچھلی پانی میں تیرتی ہے۔ یہاں ’تیرتی‘ مفعول ہے۔
  • اسم فاعل: وہ اسم ہے جو مصدر سے بنے اور کام کرنے والے کو بتائے۔ جیسے کرنا سے کرنے والا، لکھنا سے لکھنے والا۔
  • اسم مفعول: وہ اسم جو کسی چیز کو ظاہر کرے جس پر کوئی فعل واقع ہوا ہو اسم مفعول کہلاتا ہے۔ جیسے لکھا ہوا خط۔

فرق بتائیے۔

  • 1: اسم فاعل اور فاعل میں۔
  • اسم فاعل بنایا جاتا ہے لیکن فاعل بنایا نہیں جاتا اس سے فعل واقع ہوتا ہے۔
  • اسم فاعل فعل کو ظاہر کرتا ہے اور فاعل کام کرنے والے کو کہتے ہیں
  • اسم فاعل کو فاعل کی جگہ پر استعمال کیا جاتا سکتا ہے لیکن فاعل کو کبھی اسم فاعل کی جگہ استعمال نہیں کیا جا سکتا۔
  • 2: اسم مفعول اور مفعول میں۔
  • اسم مفعول وہ ہے جس سے کوئی کام کرنا واقع ہو۔
  • اسم مفعول کو مفعول کی جگہ پر استعمال کیا جاتا سکتا ہے لیکن مفعول کو کبھی اسم مفعول کی جگہ استعمال نہیں کیا جا سکتا۔

3: ”ان“ سابقہ ﴿prefix﴾ لگا کر الفاظ بنائیے اور ان کے معنی لکھیے۔

سابقہلفظنیا لفظمعنی
انپڑھان پڑھناخواندہ
اندیکھاان دیکھانابینا
انگنتان گنتلاتعداد
انجانانجاناجنبی
انمولانمولقیمتی
انتھکان تھکمحنتی

سوال: مضمون لکھیے۔

Advertisement

Advertisement

Advertisement

Advertisement
Advertisement