تمباکو نوشی کے نقصانات

آج کل سب سے عام پریشانیوں میں سے ایک پریشانی جو ساری دنیا میں لوگوں کو مار رہی ہے وہ سگریٹ نوشی ہے۔ بہت سے لوگ تناؤ ، ذاتی مسائل اور ہائی بلڈ پریشر کی وجہ سے اس خوفناک عادت کا آغاز کر دیتے ہیں۔ کچھ لوگ اس کو نمائش کے طور پر بھی شروع کر دیتے ہیں یا کچھ لوگ اس سے لطف اٹھانے کے لیے بھی اس کا استعمال کرتے ہیں۔

ایک سگریٹ نوش کی وجہ سے دوسرے انسان کو تمباکو نوشی ہوسکتی ہے جس کی وجہ سے وہ بڑے نشے کی لت کا سبب بن سکتا ہے۔ جب کوئی سگریٹ یا تمباکو نوشی کرتا ہے تو وہ نہ صرف خود کو بلکہ اپنے آس پاس کے دیگر افراد کو بھی تکلیف دیتا ہے۔ سگریٹ نوشی انسان کے جسم کو بہت سی خوفناک بیماریاں دیتی ہے۔ تقریباً ہر کوئی جانتا ہے کہ تمباکو نوشی کینسر اور دل کی بیماری کا سبب بنتی ہے۔ اس کا استعمال کرنے سے ایک انسان کی زندگی تقریبا 10 سال کم ہو سکتی ہے اور اس گندی عادت کی وجہ سے سال میں ہزاروں سگریٹ پی لی جاتی ہیں۔ ظاہر ہے تمباکو نوشی ایک سخت گندی عادت ہے کیونکہ تمباکو میں نیکوٹین ہوتا ہے جو انتہائی لت لگا دیتا ہےجس کی وجہ سے اس لت کو انسان آسانی سے نہیں چھوڑ سکتا۔

سب سے زیادہ نو عمر افراد اس نوشی کا استعمال کرتے ہیں کیونکہ وہ فٹ رہنا چاہتے ہیں۔ نو عمر افراد اپنے دوستوں کو سگریٹ نوشی کرتے ہوئے دیکھتے ہیں تو ان کے ذہن میں یہ خیال بن جاتا ہے کہ یہ سگریٹ نوشی کی وجہ سے خوش یا آزاد نظر آتے ہیں حالانکہ ایسا بلکل بھی نہیں ہوتا۔

سگریٹ نوشی کی پہلی وجہ جو نکوٹین ہے سگریٹ میں شامل ایک لت اور مضر مادہ ہے۔ اس سے تناؤ کم ہوتا ہے اور یہ بھی خیال کیا جاتا ہے کہ اس سے بے چین اور پریشان افراد پرسکون رہتے ہیں۔ سگریٹ نوشی کی دوسری بنیادی وجہ "نفسیاتی” ہے جو لوگوں کو اس عادت تک پہنچانے کے لیے ایک بہت ہی اہم عنصر معلوم ہوتا ہے۔ کچھ بچے بہت سے معاملات میں ہائی بلڈ پریشر کی وجہ سے چھوٹی عمر میں ہی تمباکو نوشی شروع کر دیتے ہیں۔

سگریٹ نوشی شروع کروانے والے بہت سے افراد اس شخص کے کنبے کے ممبر یا قریبی دوست ہوتے ہیں جن کو دیکھ کر یہ افراد بھی اس کی لت میں مبتلا ہو جاتے ہیں اور سگریٹ نوشی شروع کر دیتے ہیں۔

سگریٹ نوشی ایک سست موت کی مانند ہے۔ تمباکو نوشی کے نقصانات کی مختلف مثالیں موجود ہیں۔ جیسے تمباکو نوشی پھیپھڑوں کے کینسر ، دل کی بیماری ، اسٹروک ، دمہ اور مختلف بیماریوں کی وسیع اقسام کا باعث بنتی ہے۔ تمباکو نوشی نہ کرنے والوں کے مقابلے میں نوشی کرنے والے افراد کو زیادہ کھانسی اور نزلہ زکام ہوتا ہے۔ خود کو متاثر کرنے کے علاوہ تمباکو نوشی کرنے والے آس پاس کے دوسرے افراد پر بھی اس کا منفی اثر ڈالتے ہیں جسے سیکنڈ ہینڈ تمباکو نوشی بھی کہا جاتا ہے۔

نیز جو بھی حاملہ خواتین سگریٹ کے دھوئیں میں مبتلا ہوتی ہیں ان میں غیر معمولی بچے پیدا ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ کیا آپ نے کبھی غور کیا ہے کہ سگریٹ میں کیا ہے جو لاکھوں افراد کو ہر دن تمباکو نوشی کرنے کی طرف دھکیل رہا ہے۔ سگریٹ میں 4000 سے زیادہ زہریلے مادے ہوتے ہیں ان میں سے کچھ یہ ہیں: آرسنک (چوہے کے زہر میں پایا جاتا ہے) ، ایسٹیک ایسڈ (ہیئر ڈائی ڈویلپر میں پایا جاتا ہے) ، امونیا (گھریلو کلینر میں پایا جاتا ہے) ، بینزین (ربڑ کے سیمنٹ میں پایا جاتا ہے) ، بٹین (ہلکے سیال میں پایا جاتا ہے) ، کاربن مونو آکسائڈ ( کار کے دھوئیں میں پائے جاتے ہیں) ، ہائیڈرازائن اور میتھانول (دونوں راکٹ ایندھن میں پائے جاتے ہیں) ، ٹار (سڑکوں میں پائے جاتے ہیں)۔

سگریٹ نوشی ایک ایسی عادت ہے جسے افراد چھوڑنا بھی مشکل محسوس کرتے ہیں۔ بہت سے لوگ مہینوں کی عادت سے چھٹکارا حاصل کرنے کی کوششوں میں کئی طرح کی تیاری کرتے ہیں بہت سارے نوعمر افراد ذہنی دباؤ اور تناؤ کی وجہ سے تمباکو نوشی کرتے ہیں لیکن انہیں اب تک یہ جان لینا چاہئے کہ تمباکو نوشی آپ کو اندر سے مار ڈالتی ہے۔ وہ تمباکو نوشی نہیں کررہے ہیں بلکہ یہ صرف جنون ہے اور یہ آپ کو کینسر دے گا۔ لیکن نوعمروں بچے نہیں سوچتے۔ تمباکو نوشی آپ کے لئے برا ہے !!!!!!

سگریٹ نوشی کے بارے میں آپ کے دوست جو کہتے ہیں اس سے ہمیشہ بچنے کی کوشش کریں۔ اللہ سبحانہ و تعالٰی نے جو کچھ دیا ہے اس پر الحمد اللہ کہیں۔ ہر چیز کے لیے براہ کرم تمباکو نوشی بند کریں اور اپنے مستقبل کو محفوظ کریں۔