کتے پر ایک مضمون

قدیم زمانے سے ہی کتوں کو پالتو جانور کی طرح پالا جاتا ہے۔ پوری دنیا میں کتوں کی بہت سی نسلیں پائی جاتی ہیں۔ کتا ایک پالتو جانور ہے جو انسانوں کے جذبات کو آسانی سے سمجھ سکتا ہے۔ اسی لئے کتے انسانوں کی خوشی میں خوش ہو جاتے ہیں اور جب بھی ان کا مالک ناخوش ہوتا ہے تو وہ بھی ناخوش ہوجاتے ہیں۔ کتا ایک واحد مخلوق ہے جو انسان کو کسی بھی حال میں اکیلا نہیں چھوڑتا۔ وہ ہمیشہ اپنے مالک کے ساتھ دوستانہ سلوک برقرار رکھتا ہے۔

کتے کا حلیہ

کتا چار پیروں والا جانور ہے ، اس کی ٹانگیں کندھوں سے الگ ہوتی ہیں، جس کی وجہ سے وہ تیز دوڑنے کے قابل ہوتا ہے۔ کتے کی دو روشن آنکھیں ہوتی ہیں۔ جس کی وجہ سے وہ اندھیرے میں بھی آسانی سے دیکھ سکتا ہے۔

کتے کی ایک دم ہوتی ہے۔ کتے کی گردن چھوٹی اور پتلی ہوتی ہے۔ کتے کی اناٹومی اور طرز عمل بھیڑیوں اور لومڑی جیسا ہی ہوتا ہے۔ مختلف قسم کی آوازیں سننے کے لئے کتے کے دو کان ہوتے ہیں۔ کتے کے بچوں کو پلا کہتے ہیں اور مادہ کتے کو کتیا کہتے ہیں۔ کتے کی الگ الگ اقسام ہوتی ہیں۔ اور ان کی نسل کے حساب سے ان کا وزن اور ان کی حیات زندگی ہوتی ہے۔ کسی کے بال چھوٹے ہوتے ہیں، کسی کے بال بڑے ہوتے ہیں، اور کسی کے بال اسی طرح مختلف رنگ کے پائے جاتے ہیں۔

کتے کی خصوصیات

  • (1) کتے کا سائنسی نام کینس لیوپس فیملیریز ہے۔
  • (2) ایک بالغ کتے کے منہ میں 42 دانت ہوتے ہیں اور ایک چھوٹے کتے کے منہ میں 28 دانت ہوتے ہیں۔
  • (3) انسانوں کے مقابلے میں کتے کا خون 13 اقسام کا ہوتا ہے جبکہ انسانوں میں صرف چار اقسام ہوتی ہیں۔
  • (4) کتے کا چھوٹا بچہ انسان کے بچے کی طرح ذہین ہوتا ہے۔
  • (5) کتا انسانوں کی طرح خواب دیکھ سکتا ہے اور انسانوں کی طرح لوگوں کے جذبات کو بھی سمجھ سکتا ہے۔
  • (6) کتے کے جسم میں صرف ناک اور انگلیوں سے ہی پسینہ آتا ہے۔
  • (7) کتے کی عمر 15 سے 20 سال ہوتی ہے۔
  • (8) جرمنی شیفرڈ قسم کے کتے کی ناک میں انسانوں کے مقابلے میں 22 ملین خلیات (cells) پائے جاتے ہیں۔ جبکہ انسانوں میں صرف 20 ملین خلیات پائے جاتے ہیں۔ اس کی وجہ سے کتے کسی بھی بدبو یا خوشبو کو دور سے سونگھ لیتے ہیں۔
  • (9) کتا اپنے منہ سے دس طرح کی آوازیں نکال سکتا ہے۔
  • (10) انسانوں کے مقابلے میں کتا بہت زیادہ سن سکتا ہے۔
  • (11) کتیا ایک وقت میں 6 سے 8 بچے دے سکتی ہے۔
  • (12) جب بھی کتا خوش ہوتا ہے وہ اپنی دم کو زور سے ہلانے لگتا ہے اور اپنے مالک کو چاٹ لیتا ہے۔
  • (13) کتا واحد مخلوق ہے جو انسانوں کی نگاہوں میں جھانکتا ہے اور اسے پتا چلتا ہے کہ اس وقت انسان کیسا محسوس کر رہا ہے۔

کتے کا کھانا

کتے اپنے کھانے میں گوشت، مچھلی، پھل، سبزیاں، روٹیاں وغیرہ کھا سکتے ہیں۔ یہ پہلے کھانے میں صرف گوشت ہی کھایا کرتا تھا لیکن انسانوں نے اسے پالتو جانوروں کی طرح کھانا کھلانا شروع کیا تو اس لئے اس نے بھی سبزی کھانا شروع کردیا ہے۔

اگر کتے کو کھانے میں چاکلیٹ کھلا دیا جاتا ہے تو وہ اس کی موت کا سبب بن سکتا ہے کیونکہ چاکلیٹ میں ایک عنصر ہوتا ہے جس میں تھیبروومین ہوتا ہے جو کتے کے جسم کے لئے زہر کا کام کرتا ہے۔

کتے کا استعمال

پرانے زمانے میں انسان اپنے آپ کو خطرناک جانوروں سے بچانے کے لیے کتے کا استعمال کرتا تھا لیکن آج کتوں کو اپنے گھر کی حفاظت اور چوروں کو گھروں سے دور رکھنے کے لئے استعمال کیا جاتاہے۔ پولیس اس کتے کو بارودی مواد کا پتہ لگانے اور مجرموں کا پتہ لگانے کے لئے بھی استعمال کرتی ہے۔

کتا اپنے مالک کو دوسرے افراد اور جانوروں سے بھی بچاتا ہے۔کتے پولیس محکمہ، سائنسی تحقیقاتی مرکز، ریلوے، فوج وغیرہ میں بھی استعمال کیے جاتے ہیں تفریح ​​کے لئے بھی کتے چلائے جاتے ہیں۔ برفیلی جگہوں پر کتوں کے پیچھے سلیج باندھ کر دوروں کا لطف لیا جاتا ہے۔

کتوں کی اقسام

دنیا میں کتوں کی نسلیں مختلف قسم کی ہیں، جن میں سے کچھ مندرجہ ذیل ہیں۔
بلڈوگ، جرمن شیفرڈ، اکبش ڈاگ، اریز پوائنٹر، بسنجی، باربیٹ، بلیو لسی، باکسر، بریارڈ، کارن ٹیریئر، کین کارسو، پالش گری ہاؤنڈ وغیرہ۔ کتے کی مختلف قسمیں پوری دنیا میں پائی جاتی ہیں

کتا ایک بہترین پالتو جانور ہے جو انسانوں کے ساتھ ہمیشہ دوستانہ سلوک کرتا ہے۔ ہمیں کبھی بھی کتوں کو تکلیف نہیں پہنچانی چاہئے۔ وہ بات نہیں کرسکتے ہیں لیکن وہ ہمارے جذبات کو سمجھ سکتے ہیں، لہذا ان سے ہمیشہ محبت کی جانی چاہئے۔

اگر کتوں کے ساتھ مناسب سلوک کیا جاتا ہے تو وہ بدلے میں اپنے مالک کی حفاظت کرتے ہیں اور ساتھ میں گھر کی بھی حفاظت کرتے ہیں۔ ہمیں ہمیشہ تمام مخلوقات کے ساتھ اچھا سلوک کرنا چاہئے کیونکہ ان کی زندگی ہم پر منحصر ہے۔ اگر ہم کتوں اور دوسرے جانوروں کے ساتھ اچھا سلوک کریں گے تو وہ بھی ہمارے ساتھ اچھا سلوک کریں گے اور ہمارے ساتھ مل کر رہیں گے۔

Advertisements