Advertisement

چڑیا گھر پر مضمون

دنیا کی طرح طرح کی مخلوق کو دیکھ کر انسان کا دل باغ باغ ہو جاتا ہے۔ رنگوں سے بھرے پھول٬ درخت اور جانور٬ پرندے یہ سب ہماری زندگی کے بہترین حصہ ہیں۔ انسان دنیا کی ہر چیز دیکھنے کے لئے اور اس کے بارے میں جاننے کے لئے ہر وقت تیار رہتا ہے۔

Advertisement

ہمارے ملک اور غیر ملکوں کی طرح طرح کی مخلوق جانور٬ پرندوں کو کار کردگی کے لئے ایک جگہ پر رکھا جاتا ہے۔ ایسی جگہ کو چڑیا گھر (zoo) کہتے ہیں۔ چڑیا گھر میں طرح طرح کے جانور، پرندے ہر طرح کی مخلوق کو رکھا جاتا ہے اور انہیں کی پسند کے حساب سے جگہ دی جاتی ہے اور اس کے علاوہ ساری مخلوق کو ان کی پسند کے حساب کا کھانا بھی دیا جاتا ہے۔

Advertisement

چڑیا گھر بچوں کی تفریح کے لئے بہت ہی زیادہ اچھی جگہ ہے۔ اور بڑے بچوں کے لئے یعنی جو شاگرد ہیں ان کے لیے تو علم (General Knowledge) کا بہت بڑا باغ ہے۔

Advertisement

متھرا روڈ کے اندر دہلی کا چڑیا گھر بہت ہی اچھا اور مشہور ہے۔ یہاں کا ماحول بہت سکون سے بھرا ہے۔ یہاں کے جانوروں اور پرندوں کو قدرتی ماحولیات دینے کے لیے یہاں جنگل٬ گھنے درخت٬ پہاڑیاں اور کھلا میدان سب کچھ موجود ہے۔

دہلی کا چڑیا گھر دیکھنے کے لئے پورا ایک دن لگتا ہے۔ کیونکہ یہاں جانوروں اور پرندوں کی تعداد بہت ہی زیادہ ہے۔ ملک اور غیر ملک کے جانوروں اور پرندوں کو الگ الگ پنجرے میں رکھا گیا ہے اور سب کے نام کے ساتھ ساتھ ان کی پیدائش کی جگہ اور ان کے کھانے پینے کی عادتوں وغیرہ کے مضمون میں معلومات دی گئی ہے۔

Advertisement

اندر جانے کے دونوں طرف کے راستے میں تالاب میں بطخیں٬ سارس٬ پانی والی مرغیاں وغیرہ پانی کی خوبصورتی بڑھاتے ہیں۔ سیکڑوں رنگ برنگی چھوٹی بڑی چڑیاں٬ طوطے٬ مور٬ کبوتر اور اُلّو وغیرہ چڑیا گھر کے پنجروں میں دیکھے جاتے ہیں۔

شیر کے پنجرے کو بہت ہی کھلے ماحول میں بنایا گیا ہے۔ دیکھنے والوں کی حفاظت کے لیے شیر کو رکھنے کی جگہ کی چاروں طرف گہری کھائی بنائی گئی ہے۔ شیر اور شیرنی کو ٹہلتے دیکھ کر دل خوش ہو جاتا ہے۔ سفید شیر چڑیا گھر کی خوبصورتی کو دوگنا بھڑھاتا ہے۔ کھلے میدان جیسی جگہوں میں ہرن دوڑ لگاتے ہیں۔ کنگارو٬ نیل گائے٬ زیبرا٬ شترمرغ وغیرہ سب یہاں موجود ہیں۔

Advertisement

یہاں پر انسان کے دیکھنے کے لیے بہت کچھ موجود ہے لیکن سب سے زیادہ مزہ بندروں کو دیکھنے میں آتا ہے۔ کالے لنگور اور چمپینجی سبھی کو دیکھنے کا اپنا ایک الگ ہی مزہ ہے۔ دریائی گھوڑے٬ مگرمچھ٬ گینڈے سب یہیں پر موجود ہیں لیکن سب ایک ہی دن میں نہیں دیکھے جا سکتے۔ کچھ نہ کچھ چھوٹ ہی جاتا ہے۔ اس لئے انسان کی یہاں پر دوبارہ آنے کی خواہش بنی رہتی ہے۔

چڑیا گھر کے باغ میں جانوروں اور پرندوں کے ساتھ چھیڑ کھانی کرنے اور انہیں کچھ بھی کھلانے پلانے کے لیے سخت منع کیا گیا ہے۔

Advertisement
Advertisement

Advertisement

Advertisement