Advertisement
وہ کتابوں میں درج ہی نہیں تھا
جو سکھایا سبق— زمانے نے
Vo Kitabon Mein Darj Hi Nahi Tha
Jo Sikhaya Sabaq …Zamane Ne
نہ ہاتھ تھام سکے نہ پا سکے دامن
بہت قریب سے اٹھ کر بچھڑ گیا کوئی
Na Hath Thaam Ske Na pa Ske Daman
Boht Qareeb Se Uth ke Bichar Gya koi
ترسادیاہے ابرگریزاں نے اس قدر
برسے جو بوندبھی تو سمندر لگے مجھے
Tarsa Diya Hai Abr e Gureezan ne Iss Qadr
Barsay Jo boound bhi Tu Samandar Lage Mujhe
احمد فراز
آنکھیں تک نچوڑ کر پی گئے
تیرے غم کتنے پیاسے تھے
Aankhein tak Nichoor kr Pe Gaye
Tere Gham Kitne Pyaase Thay
نہ دل کے جذبات الگ، نہ محبت کے انداز الگ
‏تھی بات لکیروں کی، تیرے ہاتھ الگ میرے ہاتھ الگ
Na Dil Ke Jazbaat Alag, Na Muhabbat ke Andaaz Alag
Thi Baat Lakeeron Ki , Tere Hath alag mere hath Alag

Advertisement

Advertisement

Advertisement