مخمس کی تعریف

پانچ پانچ مصرعوں کے بندوں والی نظم کو مخمس کہتے ہیں . پہلے بند کے پانچوں مصرعے ہم قافیہ ہوتے ہیں .اس کے بعد ہر بند کے پہلے چار مصرعے الگ سے ہم قافیہ ہوتے ہیں .پانچوں مصرعے قافیے کے معاملہ میں پہلے بند کی پیروی کرتا ہے .کبھی ایک ہی مصرع ہر بند کے آخر میں یعنی پانچویں مصرعے کے طور پر دہرایا جاتا ہے .مثال دیکھیے .یہ ایک مخمس کا آخری بند ہے ..

حالت تو یہ ہے مجھ کو غموں سے نہیں فراغ
دل سوزش دارونی سے جلتا ہے جوں چراغ
سینہ تمام چاک ہے ،سارا جگر ہے داغ
ہے نام مجلسوں میں مرا میرؔ بے دماغ

از بس کہ کم دماغی نے پایا ہے اشتہار
……

Close