Advertisement

سوال نمبر 1: اس کہانی کا خلاصہ مختصراً اپنے الفاظ میں تحریر کیجیے۔

آپ نے بہت سارے راجاؤں کے بارے میں سنا ہوگا لیکن آج آپ کے سامنے ایک ایسے راجا کا حال واضح کیا جائے گا جو نہایت ہی سخی اور فیاض تھا۔ اس کا نام راجہ جھمبو لوچن تھا۔ ان کے ایک بھائی تھے اور وہ بھی راجہ تھے ان کا نام باہولوچن تھا۔ ان کے دربار میں ہر خاص و عام کو آنے کی اجازت تھی۔ لوگ دور دور سے سیاحت کی غرض سے یہاں آتے تھے۔

راجا کو ادب سے بڑا شغف تھا۔ اس کے دربار سے کئی ادیب شاعر اور داستان گو منسلک تھے اور وہ ان سے شاعری اور کہانی سنا کرتا تھا اور ان کو انعام و اکرام سے نوازتا تھا۔ اس راجا کے کہیں واقعے مشہور ہیں جن میں سے ایک اس طرح ہے کہ راجہ کو شکار کرنے کا بہت شوق تھا۔ وہ اپنے درباریوں کے ساتھ شکار پر گیا۔ بہت دیر تک اس کو کچھ نظر نہیں آیا۔ اچانک اس کی نظر ایک تالا ب پر پڑھی جہاں شیر اور بکری دونوں ایک ساتھ پانی پی رہے تھے۔ بادشاہ اس منظر کو دیکھ کر بہت خوش ہوتا ہے اور اس نے ارادہ کیا کہ اب وہ کبھی شکار نہیں کرےگا۔

Advertisement

اس کے بعد راجہ نے اس جگہ پرایک شہر بسایا جس کا نام جمبو لوچن رکھا گیا جو رفتہ رفتہ "جموں ” کے نام سے مشہور ہوا۔ اب یہ جموں شہر بہت زیادہ خوبصورت ہے۔ یہاں کی آبادی میں بہت اضافہ ہوا ہے۔ اب یہاں ہندو مسلمان سکھ اور عیسائی سبھی مذاہب کے ماننے والے رہتے ہیں جو آپس میں بہت پیار و محبت سے رہتے ہیں۔

Advertisement

اس کہانی کے سوالوں کے جوابات کے لیے یہاں کلک کریں۔

سوال نمبر 2: مندرجہ ذیل الفاظ کی جمع لکھیے۔

الفاظجمع
ادیبادباء
شاعرشعراء
مندرمنادر
مسجدمساجد
منظرمناظر
قصبہقصبے
مقاممقامات
Advertisement

Advertisement
Advertisement