• کوئی جیتا کوئی مرتا ہی رہا
  • عشق اپنا کام کرتا ہی رہا
  • جمع خاطر کوئی کرتا ہی رہا
  • دل کا شیرازہ بکھرتا ہی رہا
  • غم وہ میخانہ ، کمی جس میں نہیں
  • دل وہ پیمانہ کہ بھرتا ہی رہا
  • حسن تو تھک بھی گیا لیکن یہ عشق
  • کار معشوقانہ کرتا ہی رہا
  • وہ مٹاتے ہی رہے لیکن یہ دل
  • نقش بن کر ابھرتا ہی رہا
  • دھڑکنیں دل کی سبھی کچھ کہہ گئیں
  • دل کو میں خاموش کرتا ہی رہا
  • تم نے نظریں پھیر لیں تو کیا ہوا
  • دل میں اک نشتر اترتا ہی رہا
Advertisements