• پرکھنا مت پرکھنے میں کوئی اپنا نہیں رہتا
  • کسی بھی آئینے میں دیر تک چہرہ نہیں رہتا
  • بڑے لوگوں سے ملنے میں ہمیشہ فاصلہ رکھنا
  • جہاں دریا سمندر سے ملا دریا نہیں رہتا
  • ہزاروں شیر میرے سو گئے کاغذ کی قبروں میں
  • عجب ماں ہوں کوئی بچہ مرا زندہ نہیں رہتا
  • محبت ایک خوشبو ہے ہمیشہ ساتھ چلتی ہے
  • کوئی انسان تنہائی میں بھی تنہا نہیں رہتا

Advertisements