Advertisement
  • کتاب” ابتدائی اردو” برائے دوسری جماعت
  • سبق نمبر01: نظم
  • شاعر کا نام: شفیع الدین نیر
  • نظم کا نام: دعا

نظم دعا کی تشریح

اے دنیا کے باغ کے مالی
اے اپنے بندوں کے والی

یہ شعر شفیع الدین نیر کی نظم “دعا” سے لیا گیا ہے۔ یہ نظم ایک حمدیہ نظم ہے جس میں اللّٰہ تعالیٰ کی ذات کی تعریف بیان کی گئی ہے۔ شاعر اس شعر میں اس دنیا کو ایک باغ سے تشبیہ دی ہے اور اللہ کی ذات کو اس باغ کی حفاظت کرنے والا اس باغ کو پھلنے پھولنے میں مدد کرنے والا یعنی مالی کہا ہے۔ شاعر کہتا ہے کہ اللہ کی ذات ہی ہم سب کی والی یعنی کہ مالک ہے۔

دل کے مالک جان کے مالک
دنیا اور جہان کے مالک

اس شعر میں شاعر کہتا ہے کہ اللہ کی ذات چونکہ ہم سب کی مالک ہے اس لیے اس ذات کا قبضہ ہمارے دک و جان پہ ہے۔ اللہ تعالیٰ ہمارے دل و جان کا مالک ہے اور وہی ذات ہمارے دلوں کے ساتھ ساتھ اس دنیا کی مالک بھی ہے۔ اس دنیا کا ایک پتا تک اپنے مالک کی مرضی کے بنا نہیں ہل سکتا ہے۔

Advertisement
دوسرا تجھ سا کوئی نہیں ہے
تجھ سا داتا کوئی نہیں ہے

اس شعر میں شاعر کہتا ہے کہ اے اللّٰہ تیری ذات اس دنیا کی مالک ہے اور تیرے سوا اس دنیا میں نہ کوئی دوسرا موجود ہے اور نہ ہی ہو سکتا ہے۔ اس شعر میں شاعر اللّٰہ تعالیٰ کی وحدانیت کی گواہی دیتے ہوئے کہتا ہے اللہ ہی ہمارا داتا یعنی ہمیں عطا کرنے والا ہے۔

Advertisement
بخش ہمارے جسم کو طاقت
بخش ہمیں محنت کی عادت

اس شعر میں شاعر کہتا ہے کہ اے اللہ ہمارے جسموں کو طاقت بخش دے کہ ہمیں طاقت بخشنے کا اختیار صرف اور صرف اللہ کی ذات کو ہی حاصل ہے۔ شاعر دعائیہ انداز میں اللّٰہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہتا ہے کہ ہم میں ایسی صفات کو پیدا کردے کہ ہم میں محنت کرنے کی عادت پیدا ہو جائے۔

Advertisement
ہمت دے کچھ کام کریں ہم
جگ میں روشن نام کریں ہم

اس شعر میں شاعر دعا کرتے ہوئے کہتا ہے کہ اے اللہ ہمیں اتںی ہمت اور طاقت بخش کہ ہم کچھ کام کر سکیں اور محض کام ہی نہیں بلکہ ایسے کام کریں کہ جس سے دنیا میں ہمارا نام روشن ہو۔

ان سوالوں کے جواب دیجیے۔

دنیا کے باغ کا مالی کسے کہا گیا ہے؟

اللّٰہ تعالیٰ کی ذات کو دنیا کے باغ کا مالی کہا گیا ہے۔

Advertisement

خدا کو کس چیز کامالک کہا گیا ہے؟

خدا کو ہمارے دل و جان اور اس دنیا جہان کا مالک کہا گیا ہے۔

داتا کسے کہا گیا ہے ؟

داتا اللّٰہ تعالیٰ کی ذات کو کہا گیا ہے۔

Advertisement

ہمیں کس کام کی عادت ڈالنی چاہیے؟

ہمیں محنت کی عادت ڈالنی چاہیے۔

نیچے دیے ہوئے لفظوں کے حروف الگ الگ لکھیے۔

دعا= د +ع + ا
جسم= ج + س + م
مالی= م+ ا + ل + ی
جہان= ج + ہ + ا + ن
روشن= ر + و + ش + ن

حروف کو ملا کر لفظ بنائیے۔

ب+ ا + غ =باغ
ج + ا + ن =جان
م+ا + ل + ک =مالک
م + ح + ن + ت =محنت
د + ن + ی + ا =دنیا

خالی جگہوں میں مناسب لفظ لکھیے۔

عادت ، جہان ، بندوں ، داتا ، ہمت

Advertisement
  • اے اپنے بندوں کے والی
  • دنیا اور جہان کے مالک
  • تجھ سا داتا کوئی نہیں ہے
  • بخش ہمیں محنت کی عادت
  • ہمت دے کچھ کام کریں ہم

حصہ ‘الف’اور ‘ب’کے صحیح جوڑ ملائیے۔

الف ب
پھول سانازک
ریشم سا نرم
پتھر سا سخت
آگ سا گرم
برف سا ٹھنڈا

سوچیے اور بتایئے۔

محنت کی عادت کے علاوہ کچھ اور اچھی عادتیں بتائیے۔

محنت کرنا اچھی عادت ہے۔ محنت کت علاوہ سچ بولنا ، دوسروں کی مدد کرنا ، غلط کاموں سے بچنا ، بڑوں کا احترام کرنا اور بچوں سے شفقت سے پیش آنا وغیرہ اچھی عادات ہیں۔

خوش خط لکھیے۔

بندوں ، جہان ، ہمیں ، محنت ، روشن

Advertisement
Advertisement