>
  • سینے میں جلن آنکھوں میں طوفان سا کیوں ہے
  • اس شہر میں ہر شخص پریشان سا کیوں ہے
  • دل ہے تو دھڑکنے کا بہانہ کوئی ڈھونڈے
  • پتھر کی طرح بے حس و بے جان سا کیوں ہے
  • تنہائی کی یہ کونسی منزل ہے رفیقو
  • تا حد نظر ایک بیابان سا کیوں ہے
  • ہم نے تو کوئی بات نکالی نہیں غم کی
  • وہ زود پشیمان پشیمان سا کیوں ہے
  • کیا کوئی نئی بات نظر آتی ہے ہم میں
  • آئینہ ہمیں دیکھ کے حیران سا کیوں ہے

Close Menu