Advertisement
  • کتاب” دور پاس”برائے ساتویں جماعت
  • سبق نمبر24:نظم
  • شاعرکا نام: محمد فاروق دیوانہ
  • نظم کا نام: پیام عمل

نظم پیام عمل کی تشریح:

گر قوم کی خدمت کرتا ہے
احسان تو کس پر دھرتا ہے
کیوں غیروں کا دم بھرتا ہے
کیوں خوف کے مارے مرتا ہے
اٹھ باندھ کمر کیا ڈرتا ہے!
پھر دیکھ خدا کیا کرتا ہے!

یہ اشعار نظم “پیام عمل” سے لیے گئے ہیں۔ اس بند میں شاعر کہتا ہے کہ اگر تم اپنی قوم کی خدمت کرتے ہو تو یہ تم کسی پہ احسان نہیں کرتے ہو۔ غیر لوگوں کی خدمت کیوں کرتے ہو اور ان کا دم کیوں بھرتے ہو۔ خوف کے مارے کیوں تم مرتے ہو۔ اٹھو کوشش کرو تمھیں کس بات کا ڈر ہے پھر دیکھو کہ خدا تمھاری کس طرح مدد کرتا ہے۔

جو عمریں مفت گنواۓ گا
وہ آخر کو پچھتائے گا
کچھ بیٹھے ہاتھ نہ آئے گا
جو ڈھونڈے گا وہ پاۓ گا
تو کب تک دیر لگاۓ گا
یہ وقت بھی آخر جاۓ گا
اٹھ باندھ کمر کیا ڈرتا ہے!
پھر دیکھ خدا کیا کرتا ہے!

اس بند میں شاعر کہتا ہے کہ جو اپنی زندگی ہو مفت میں ضائع کردے گا اس کو آخر میں پھچتانا پڑے گا۔ ایسے بیٹھے بیٹھے کسی کے ہاتھ کچھ نہیں آئے گا بلکہ تم جو چیز ڈھونڈو گے وہی پاؤ گے۔ یہ وقت بھی آخر گزر جائے گا تم کب ٹک دیر لگاؤ گے اٹھو کمر کسو کسی بات کا خوف ہے پھر دیکھو کہ خدا کیا کرتا ہے۔

Advertisement
یہ دنیا آخر فانی ہے
اور جان بھی اک دن جانی ہے
پھر تجھ کو کیوں حیرانی ہے
کر ڈال جو دل میں ٹھانی ہے
جب ہمت کی جولانی ہے
تو پتھر بھی پھر پانی ہے
اٹھ باندھ کمر کیا ڈرتا ہے
پھر دیکھ خدا کیا کرتا ہے

اس بند میں شاعر کہتا ہے تو یہ دنیا فانی ہے سب کچھ ایک روز فنا ہو جائے گا اور یہ زندگی جان بھی فانی ہے جو ایک روز ختم ہو جانی ہے۔پھر تم کیوں حیراں ہو جو ٹھان لی ہے وہ کر گزرو۔جب ہمت کا جوش و جذبہ موجود ہے تو پھر پتھر بھی تمھارے سامنے پانی ہو جائے گا۔ اٹھو کوشش کرو اور پھر دیکھو کہ خدا کس طرح تمھاری مدد کرتا ہے۔

Advertisement

ان سوالوں کے جواب دیجیے:

شاعر نے پہلے بند میں کس کی خدمت کی بات کہی ہے؟

شاعر نے پہلے بند میں ملک و قوم کی خدمت کی بات کی ہے۔

Advertisement

کس کا دم بھرنے سے منع کیا ہے؟

غیروں کا دم بھرنے سے منع کیا گیا ہے۔

عمر مفت گنوانے والے کا انجام کیا ہوتا ہے؟

عمر مفت گنوانے والا آخر میں پچھتاتا ہے۔

Advertisement

آخری بند میں شاعر نے دنیا کے بارے میں کیا کہا ہے؟

آخری بند میں شاعر نے دنیا کو فانی کہا ہے۔

اٹھ باندھ کمر کیا ڈرتا ہے“ سے شاعر کا کیا مقصد ہے؟

اس سے شاعر کی مراد کوشش کرنا ہے اور ہمت کرتے ہوئے کمر کس کر کوئی کام کرنا ہے۔

Advertisement

ہمت کی جولانی سے کیا مراد ہے؟

ہمت کی جولانی سے مراد کسی کام کو کرنے کا جوش و خروش ہو نا ہے۔

نیچے دیے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے:

قومہندوستانی عوام زندہ قوم ہیں۔
خوفملک بھر میں خوف و ہراس کی لہر دوڑ گئی۔
ہمتمشکل وقت میں ہمت سے کام لینا چاہیے۔
فانییہ دنیا فانی ہے۔
خدمتہمیں اپنے والدین کی خدمت کرنی چاہیے۔
حیرانیاپنے دوست کو اچانک سامنے پا کر مجھے حیرانی ہوئی۔

ان لفظوں کے متضاد لکھیے:

غیراپنا
کھوناپانا
آناجانا
مرناجینا
دیرجلدی

اشعار مکمل کیجیے:

  • جو عمریں مفت گنواۓ گا
  • وہ آخر کو پچھتائے گا
  • کیوں غیروں کا دم بھرتا ہے
  • کیوں خوف کے مارے مرتا ہے
  • تو کب تک دیر لگاۓ گا
  • یہ وقت بھی آخر جاۓ گا
  • یہ دنیا آخر فانی ہے
  • اور جان بھی اک دن جانی ہے
Advertisement

Advertisement