Advertisement

تعارف

اردو ادب کے افق پر ستارے کی مانند چمکنے والا اردو کا ممتاز شاعر، ادیب اور ڈرامہ نگار، اردو ادب کے بہت سے ستاروں میں ایک چمکدار ستارا اور اتنا بڑا نام کہ تعریف بیان کرتے ہوئے تاریخ کی سیاہی ختم ہو جائے۔ ایسے ہی ایک مقبول عام شاعر عدیم ہاشمی ہیں جن کی تاریخ پیدائش یکم  اگست ۱۹۴۶ء ہے۔ عدیم ہاشمی کا اصل نام فصیح الدین تھا۔ عدیم ہاشمی بھارت کے شہر ڈلہوزی میں پیدا ہوئے تھے۔ عدیم ہاشمی کا شمار اردو کے جدید شعرا میں ہوتا ہے۔

Advertisement

شعری مجموعے

ان کے متعدد شعری مجموعے شائع ہوئے جن میں ترکش،
مکالمہ،
فاصلے ایسے بھی ہوں گے،
میں نے کہا وصال،
مجھے تم سے محبت ہے،
چہرا تمہارا یاد رہتا ہے،
کہو کتنی محبت ہے اور
بہت نزدیک آتے جارہے ہو
کے نام سرفہرست ہیں۔

Advertisement

اعزازات

عدیم ہاشمی نے اردو ادب کی خدمات سر انجام دیں وہیں انھوں نے پاکستان ٹیلی وژن کے لئے ایک ڈرامہ سیریل ’’آغوش‘‘ بھی تحریر کیا اور مشہور ڈرامہ سیریز گیسٹ ہاؤس کے لئے بھی کچھ ڈرامے تحریر کئے۔

Advertisement
بچھڑ کے تجھ سے نہ دیکھا گیا کسی کا ملاپ
اڑا دیئے ہیں پرندے شجر میں بیٹھے ہوئے۔

آخری ایام

عدیم ہاشمی جیسے شاعر زندگی سے لڑتے رہے اور آخر کار ۵ نومبر ۲۰۰۱ء کو عدیم ہاشمی امریکا کے شہر شکاگو میں زندگی سے ہار کر وفات پاگئے۔  آپ وہیں پاکستانیوں کے قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔

منتخب کلام

عدیم ہاشمی کی خوبصورت غزل مندرجہ ذیل ہے۔

Advertisement

Quiz on Adeem Hashmi

عدیم ہاشمی 1
Advertisement

Advertisement

Advertisement