Advertisement

گائے پر مضمون

گائے ایک پالتو جانور ہے۔اس کی چار ٹانگیں، دو سینگ اور ایک لمبی دم ہوتی ہے۔یہ چارہ دانہ اور گھاس کھاتی ہے۔ یہ کئی رنگوں کی ہوتی ہے اور دنیا کے ہر حصے میں پائی جاتی ہے۔اس کا دودھ بچوں کے لئے بہت مفید ہوتا ہے۔کیونکہ یہ جلد ہضم ہو جاتا ہے۔اس کے دودھ سے چائے، مکھن، دھی، گھی، کھویا، برفی اور مٹھائیاں بنتی ہیں۔

Advertisement

اس کی کھال سے جوتے اور گھوڑوں کی کاٹھیاں اور ساز وغیرہ بنائے جاتے ہیں۔ اس کی ہڈیوں سے بٹن، چاکو اور چھریوں کے دستے بنائے جاتے ہیں۔گائے کے بچھڑے بڑے ہو کر بیل کہلاتے ہیں جن سے کھیتی باڑی کا کام لیا جاتا ہے۔ اس طرح گائے ایک بہت ہی مفید اور کارآمد پالتو جانور ہے۔

Advertisement

OR

گائے پر ایک مضمون

گائے ایک پالتو جانور ہے۔ گائے کی بہت سی اقسام ہوتی ہیں۔اور یہ جانور دنیا کے تمام علاقوں میں پایا جاتا ہے اور اس کا دودھ بھی پوری دنیا میں استعمال کیا جاتا ہے۔گائے کا دودھ میٹھا ہوتا ہے۔ بھینس یا بکری کے دودھ کے مقابلے میں اس کا دودھ میٹھا اور لذیز ہوتا ہے۔

Advertisement

اس کے دودھ سے کئی طرح کے کھانے کی لذیذ اشیاء تیار کی جاتی ہیں۔گائے کا دودھ بڑھتے بچوں کے لئے نہایت مفید ہوتا ہے۔گائے کی کئی نسلیں اور کئی رنگ ہوتے ہیں۔ ہندو گاۓ کو "گاؤ ماتا” کہتے ہیں اور اسے ایک متبرک جنوار سمجھتے ہیں۔گائے کی چار ٹانگیں ہوتی ہیں، دو کان، دو سینگ، ایک لمبی دم اور چار تھن ہوتے ہیں۔سنگ اسے اپنا بچاؤ کرنے کے کام آتے ہیں۔دم کے سرے پر بال ہوتے ہیں جس سے گائے مکھیوں وغیرہ کو دور بھگاتی ہے۔ تھن بچھڑے کو دودھ پینے کے کام آتے ہیں۔

انسان اپنے ہاتھوں سے گائے کے ان ہی تھنوں سے دودھ حاصل کرتا ہے۔اب گائے سے بڑے پیمانے پر دودھ لینے کے لیے مشینیں بھی استعمال کی جاتی ہیں اس کے اوپر کے جبڑوں میں دانت نہیں ہوتے۔یوں تو گائے کو خشک گھاس اور اناج کھانے کے لیے دیا جاتا ہے لیکن گائے کیلئے ہری گھاس ایک بہترین قدرتی غذا ہے۔گائے کے سونگھنے کی طاقت دوسرے کئی جانوروں سے مختلف اور تیز ہوتی ہے۔گائے کا گوبر ہم کھاد کے طور پر بھی استعمال کرتے ہیں اور کچھ لوگ اسے سکھا کر ایندھن کی جگہ بھی استعمال کرتے ہیں۔

Advertisement

گائے بچھڑوں کو جنم دیتی ہے۔ یہ بڑے ہو کر کسان کو کھیت جوتنے میں مدد دیتے ہیں۔اس کے علاوہ وہ بیل گاڑیاں کھینچنے کے کام بھی آتا ہے۔گائے کے مر جانے کے بعد اس کا چمڑا کئی مفید کاموں میں استعمال ہوتا ہے۔ہمیں خدا کا شکر ادا کرنا چاہیے کہ اس نے ہمیں اس قدر فائدہ مند جانور بخشا۔ہمیں اچھی طرح اس کی دیکھ بھال کرنی چاہیے اور اس کی صفائی کا خاص خیال رکھنا چاہیے۔اسماعیل میرٹھی نے کیا خوب کہا ہے؀

رب کا شکر ادا کر بھائی
جس نے ہماری گائے بنائی
Advertisement

Advertisement

Advertisement