Advertisement

میں نے عید کیسی گزاری

مسلمان سال میں دو تہوار مناتے ہیں۔ ایک عید الفطر اور دوسری عید الضحیٰ۔ عید الفطر کو عموماً چھوٹی عید یا میٹھی عید اور عید الضحیٰ کو بڑی عید یا بقرا عید بھی کہا جاتا ہے۔

Advertisement

ہر مسلمان کی طرح مجھے بھی عید کے دن کا بے صبری سے انتظار ہوتا ہے تاکہ میں اللہ پاک کی نعمتوں سے لطف اندوز ہو سکوں۔ رمضان کے روزے رکھنے کے بعد عید منانے کا بھی اپنا ہی مزہ ہے۔ جب نماز باقائدگی سے ادا کرنے کی عادت ہو چکی ہوتی ہے۔ پھر نمازِ عید کے بعد دن کا آغاز میٹھی چیز کھا کر ہوتا ہے۔ تمام گھر والوں سے عید ملنے کے بعد پورا دن رشتہ داروں کے آنے جانے سے گھر میں ایک رونق کا سماں بندھا ہوتا ہے۔

رشتہ داروں کے علاوہ میں ہر عید پر دوست و احباب کے ساتھ مل کر کہیں نہ کہیں گھومنے ضرور جاتا ہوں جس سے عید کا مزہ دو بالا ہو جاتا ہے۔ پھر عید کے روز ضرورت مندوں کی مدد بھی کرنی چاہیے تاکہ وہ بھی عید مناسکیں اور ہمارے ساتھ خوش ہو سکیں۔ ایسا کرنے سے مجھے جو خوشی اور سکون نصیب ہوتا ہے اس کو لفظوں میں بیان نہیں کیا جاسکتا۔

Advertisement

عید کے دن سب نہا دھو کر جب عیدگاہ کی جانب جاتے ہیں تب مساوات کی ایک مثال قائم ہوتی ہے اور میری کوشش ہوتی ہے کہ میں ہر عید پر عید کی نماز عید گاہ میں ادا کروں۔

Advertisement

عید الضحی کے موقعے پر ہم حضرت ابراہیم علیہ السلام کی یاد میں جانور کی قربانی دیتے ہیں۔عید الضحی کے موقعے پر صبح سے قصائی کے پیچھے گھومنے کے بعد جب قربانی ہوتی ہے تو گوشت کے تین حصے کرنے اور سب کو گوشت دے کر فارغ ہونے میں ہی رات ہوجاتی ہے اور پھر اگلے دن باربی کیو کا انتظام کیا جاتا ہے۔ پھر پورا ہفتہ ہی کبھی دوستوں اور کبھی خاندان والوں کے ساتھ یہ پارٹی چلتی رہتی ہے اور سب اس سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔

ہمیں قربانی کا گوشت زیادہ سے زیادہ غرباء میں تقسیم کرنا چاہیے کیونکہ ہم اس نعمت سے کبھی بھی لطف اندوز ہو سکتے ہیں مگر وہ ان آسائشات سے تقریباً سارا سال محروم رہتے ہیں اور پھر اس بات کا حکم ہمارے رب نے بھی دیا ہے کہ اس روز تمام غریبوں کو بھی گوشت دیا جائے بلکہ ان کے لیے ہماری قربانی میں الگ سے ایک حصہ بھی رکھا گیا ہے۔

عید کے دن سب سے زیادہ مزہ اس وقت آتا ہے جب بچوں کو عیدی ملتی ہے اور بچے بڑوں سے زیادہ عیدی کی ضد کرنے کے بعد ایک دوسرے کو اپنی عیدی دکھا کر خوش ہوتے ہیں۔

ہمیں چاہیے کہ عید کے موقعے پر اللہ تعالیٰ کی دی گئی تمام نعمتوں کا شکر ادا کریں اور اللہ تعالیٰ کی تمام مخلوقات کی مدد کریں تاکہ وہ بھی عید کے دن خوش و خرم رہ کر عید کا مزہ لے سکیں۔ ایسا کرنے سے اللہ تعالیٰ ہم سے خوش ہونگیں اور ہمیں اپنی مزید نعمتوں سے نوازیں گے۔

Advertisement
Advertisement

Advertisement

Advertisement