کشمیر کی خوبصورتی پر ایک مضمون

کشمیر دنیا کی سب سے خوبصورت جگہوں میں سے ایک ہے۔ اور یہ خوبصورت خطۂ زمین ہندوستان اور پاکستان کے درمیان واقع ہے۔ کشمیر کا کچھ حصہ پاکستان میں واقع ہے تو کچھ ہندوستان میں ہے۔کشمیر کو اس کی خوبصورتی کی وجہ سے دنیا کی جنت بھی کہا جاتا ہے۔ یہ ایک اسی جگہ ہے جہاں قدرتی برفباری ہوتی ہے اور یہاں چاروں طرف برف کی سفید چادریں بچھی ہوئی دیکھائی دیتی ہیں۔ دیودار سے اور پائن کے درختوں سے گرنے والی برف واقعی یہاں آنے والوں کو ایک نئی دنیا عطا کرتی ہے۔ آپ جہاں بھی نظر ڈالیے صرف برف ہی برف نظر آتی ہے اور دنیا بھر سے لوگ اس حسین نظارے کا لطف اٹھانے یہاں آتے ہیں۔ سردیوں میں جموں و کشمیر کے سیاحتی مقامات کا یہی نظارہ ہوتا ہے جسے الفاظ میں بیان نہیں کیا جاسکتا اور ایک بار اسے دیکھنے کے بعد ہر شخص کہتا ہے: ‘اگر زمین پر جنت ہے تو وہ کشمیر ہے’۔

سیاحتی مقامات


جموں وکشمیر کے سیاحتی مقامات نہ صرف گرمیوں کے موسم میں بلکہ سردیوں میں بھی سیاحوں کو راغب کرتے ہیں۔ جموں وکشمیر کے سیاحتی مقامات کی دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ دہشت گردی کے ایام میں بھی یہاں آنے والوں کے قدم کبھی نہیں رکتے۔ فرق صرف اتنا ہے کہ اگر وہ ایک سیاحتی مقام تک نہیں پہنچ پاتے ہیں تو وہ دوسرے مقام پر چلے جاتے ہیں۔

اب جبکہ وادی نے برف کی چادر اوڑھ لی ہے۔ چنار کے درخت سرخ ہو چکے ہیں۔ پہاڑوں پر برف کی چمک سے ایسا لگتا ہے جیسے چاندی کے ورق چڑھا دیے ہوں۔ جن لوگوں کو جنت کا شوق ہے ان کے لئے یہ تفریح کرنے کا بہترین مقام ہے۔ گذشتہ کچھ دنوں سے برف باری کا عمل شروع ہوچکا ہے اور ان حسین مناظر کو اپنے کیمرے میں محفوظ کرنے کا وقت اس سے اچھا اور نہیں ہو سکتا۔

ریاست میں سیاحوں کے لئے بہت سے مقامات ہیں جہاں ہر آنے والے کو سیاح جانا جاتا ہے، لیکن شاید ہی کوئی شخص گلمرگ ، سونامرگ ، پہلگام اور پتنيٹاپ کے بغیر زندگی گزار سکے ان میں سے پہلی تین وادی کشمیر میں مختلف سمتوں میں ہیں ، اور چوتھی پتنیٹاپ جموں ڈویژن میں کشمیر جاتے ہوئے راستے میں آتا ہے۔

گلمرگ

  • پہلے ہم گلمرگ کے بارے میں بات کریں۔ یہ کشمیر ڈویژن کے ضلع بارہمولہ میں واقع ہے۔ یہ سرینگر سے 57 کلومیٹر دور ہے۔ سرینگر سے مسافر کو بس دو گھنٹے میں گلمرگ پہنچا دیتی ہے۔ گلمرگ میں اسکیٹنگ ، گولف کورسز ، دنیا کی بلند ترین کیبل کار اور ٹریکنگ کے علاوہ صوفی سینٹ بابا رشی کی درگاہ بھی دیکھنے کو ملتی ہے۔

سونا مرگ

  • گلمرگ ان لوگوں کی زندگی ہے جو کشمیر آتے ہیں ، تو سونامرگ کو یقیناً ایک دل کہا جاسکتا ہے۔سطحی سمندر سے 2،730 میٹر بلندی پر کشمیر ڈویژن میں واقع ، سونامرگ بھی خوبصورتی کے معاملے میں اپنی مثال آپ ہے۔

پہلگام

  • پہلگام کو فلمی شوٹنگ کی وجہ سے پہچان حاصل ہوئی ہے کیونکہ بہت سی فلموں کی شوٹنگ اس کے آس پاس کی وادیوں میں کی گئی ہے اور امرناتھ یاترا کا روایتی راستہ بھی یہیں سے ہے۔ دریائے لِدر کے دونوں کناروں پر واقع پہلگام کی خوبصورتی اپنی مثال آپ ہے۔ اس میں گھوڑوں کی سواری ، ٹریکنگ ، گولف ، فشنگ وغیرہ کے لئے مکمل سہولیات موجود ہیں۔

پٹنیٹاپ

  • ان سب کے درمیان ، اگر ہم پٹنیٹاپ کے بارے میں بات نہیں کریں گے تو جموں و کشمیر آنے کا مقصد شاید ہی پورا ہوسکے گا۔ یہ جموں اور سرینگر سے 108 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ایک مشہور سیاحتی مقام ہے۔ یہ گہرے درختوں اور گھروں سے گھیرا ہوا ہے، جس کی سطح 2004 میٹر بلندی پر ہے ، اور اسی کی وجہ سے ہر ایک شخص کشمیر کو زمین پر جنت ہونے کا محسوس کرتا ہے۔

جموں کے پتنیٹاپ میں بھی برف باری شروع ہو چکی ہے اور دھند نے پتنیٹاپ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ اگر آپ اس سیزن میں جموں و کشمیر آئیں گے تو آپ کو معلوم ہوگا کہ اس شاہی ریاست کو جنت کیوں کہا گیا ہے۔