Advertisement

صبح کی سیر

خدا کی بنائی ہوئی یہ دنیا بہت خوبصورت ہے اور اس دنیا کا سب سے خوبصورت نظارا صبح کے وقت دیکھنے کو ملتا ہے۔ اور اس خوبصورت نظارے کا مزہ وہی لے سکتے ہیں جو صبح صبح اٹھ کر سیر کیلئے نکلتے ہیں۔

صبح کی سیر کے فوائد

صبح کی سیر کرنے والے دماغ اور جسم دونوں سے بالکل تروتازہ رہتے ہیں۔ صحت ایک دم درست رہتی ہے اور بیماریاں ان سے دور رہتی ہیں۔اور جو لوگ صبح دیر سے سو کر اٹھتے ہیں وہ صبح کے خوبصورت نظارے سے تو محروم رہتے ہی ہیں، اس کے علاوہ دماغ تروتازہ نہ ہونے کی وجہ سے چڑچڑاپن اور بیماریوں میں مبتلا رہتے ہیں۔ بدن میں سستی سی رہتی ہے۔

Advertisement

صبح کی سیر سے بیماریوں کا علاج

صبح کی سیر کرنے سے انسان کی بہت سی بیماریاں خود بخود ٹھیک ہو جاتی ہیں۔ ڈاکٹر بھی بیمار انسان کو صبح ٹہلنے کی تاکید کرتے ہیں۔ آجکل شوگر کی بیماری کا بڑھنا جیسے عام ہو گیا ہے۔ شوگر کے مریضوں کو صبح ٹہلنا بہت زیادہ ضروری ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ شوگر کے مریض جتنا زیادہ صبح کے وقت پیدل چلیں گے ان کے لئے اتنا زیادہ اچھا ہے۔ اس سے ان کا شوگر برابر رہیگا اور صحت اچھی رہے گی۔

Advertisement

صبح کی سیر کرنے سے پیٹ صاف رہتا ہے جس کی وجہ سے چہرے پر ایک چمک سی آتی ہے۔ پھیپھڑوں میں تازہ ہوا جانے سے وہ بالکل درست رہتے ہیں اور اپنا کام لمبے وقت تک کرتے ہیں۔صبح کے وقت سیر کرنے سے جسم کی اچھی ورزش ہو جاتی ہے۔ سارا دن دل خوش رہتا ہے اور چہرے پر سارا دن ایک مسکراہٹ رہتی ہے۔

Advertisement

کام کرنے میں تھکان نہیں محسوس ہوتی اور فرتی ہونے کی وجہ سے کام جلدی ہوتا ہے جس سے انسان زیادہ کام کرسکتا ہے۔ صبح کی سیر اکیلے بھی ہوسکتی ہے لیکن جب ایک سے دو لوگ ہوں یا دو سے تین لوگ ہوں تو اس کا لطف اور زیادہ ہی بڑھ جاتا ہے۔

قدرتی مناظر

صبح فجر کی نماز پڑھنے کے بعد جب انسان سیر کو نکلتا ہے تو قدرت کے بنائے ہوئے خوبصورت نظارے کو اپنی آنکھوں سے دیکھتا ہے اور اس کا لطف اٹھاتا ہے۔ صبح کے نظارے کی بات ہی کچھ الگ ہوتی ہے۔ ٹھنڈی ٹھنڈی ہوائیں٬ سوندھی سوندھی خوشبو٬ ہلکی ہلکی ہوا سے اڑتے ہوئے پتے٬ پیڑوں کی ڈالی پر بیٹھے ہوئے پرندے اور پرندوں کا میٹھی میٹھی آواز میں چہچہانا۔ ایسا لگتا ہے کہ پرندے بھی صبح کی سیر کا لطف اٹھا رہے ہوتے ہیں۔ یہ سارا منظر بہت ہی زیادہ خوبصورت لگتا ہے۔

Advertisement

پھولوں کی دنیا

صبح کے وقت باغوں کا بھی منظر بہت ہی خوبصورت لگتا ہے۔ رات کی کلیاں صبح کھل کر پھول میں تبدیل ہو جاتی ہیں۔ پھولوں اور پتیوں پر شبنم کی بوندیں گری ہوتی ہیں اور کچھ تازہ کلیاں بھی آجاتی ہیں۔ پورا باغ ہرا بھرا اور رنگیں نظر آتا ہے۔ چاروں طرف ہلکی ہلکی خوشبو مہکتی ہے۔ ان سب کو دیکھنے کے بعد جب دھیرے دھیرے سورج کی کرنیں نکلنا شروع ہوتی ہیں تو صبح کی سیر کی خوبصورتی کا لطف دوبالا ہوجاتا ہے۔ اللہ کی بنائی ہوئی ہر چیز واقعی لاجواب ہے۔

انسان کو اپنی زندگی کا تھوڑا سا وقت نکال کر صبح کی سیر کے لیے ضرور جانا چاہیے۔ جس سے وہ خوشحال٬ خوش مزاج اور صحت مند تو رہیگا ہی اس کے ساتھ ساتھ خدا کی بنائی ہوئی ہر مخلوق سے بھی واقف ہوتا رہے گا۔

Advertisement
Advertisement